آرٹیکلز

بانئ پاکستان قائد اعظم اور پاک فوج

( سلسلہ وار ) بانی پاکستان محمد علی جناح کے نزدیک فوج کی اھمیت بہت زیادہ تھی ، یہی وجہ تھی کہ قیام پاکستان وقت انہوں نے سب سے زیادہ زور فوج کے حوالہ سے دیا تھا ، برطانوی سامراج برصغیر کی ھر شے تقسیم کرنے پر آمادہ تھے لیکن وہ فوج کی تقسیم نہی چاھتے تھے وجہ کوئی بھی ھو سکتی تھی ، ھو سکتا ھے وہ خطے میں اپنا اثرورسوخ برقرار رکھنے کی غرض سے فوج کی تقسیم نہی چاھتے تھے اس وقت کے روس کا گرم پانیوں تک پہنچنے کا خواب یا پھر جس فوج کی تشکیل پر دو سو سال کا عرصہ لگا ھو اسے تقسیم کرنے کا حوصلہ نا پڑتا ھو ، بہرطور وجہ کوئی بھی ھو سکتی ھے ۔ اور ایسے میں کانگریس بھی انگریز سرکار کی ھم نوا تھی نہرو بھی فوج کی تقسیم کے خلاف تھے ۔ نہرو کا خیال تھا کہ بغیر فوج کے پاکستان نہتا ، غیر محفوظ اور بے یارو مددگار ھوگا اور زیادہ عرصہ قائم نہی رہ پائے گا ۔ مگر قائد اعظم کے آھنی عزم ، حوصلے اور فیصلے کی قوت کے سامنے کانگریس کی سازش اور انگریز کی خواھش دم توڑ گئی اور فوج کو تقسیم کر دیا گیا ، پاکستان کے حصہ میں آنے والی فوج ھر چند کہ تعداد میں کم اور خالی ھاتھ تھی اس کے پاس صرف وردی اور ایک رائفل ھی تھی ، مگر سماجی اعتبار سے اس کا مرتبہ ایک دم بہت بلند ھو چکا تھا ۔ اسے اب ایک ایسے وطن کی پاسداری اور نگہبانی سونپ دی گئی تھی جو اس کا اپنا تھا ۔ وہ پاکستان جو پہلی صدی ھجری کے بعد مدینہ منورہ کے ظہور کے بعد دوسرا معجزہ ارضی ھے ، جسے اسلام کے نام پر حاصل کیا گیا تھا ، جس کے لئے زندہ رھنا غازی اور مرنا شہادت کی معراج پا چکا تھا ۔

( جاری ھے)

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

Adblock Detected

Welcome! It looks like you're using an ad blocker. That's okay. Who doesn't? But without advertising-income, we can't keep making this site awesome.