آرٹیکلز

پاکستان کے دشمن

تحریر ( محمد عبداللہ ) آج اگر پاکستان کو ترنوالہ بنانے کے خواہشمند ہچکچا رہے ہیں تو وہ صرف اس کی ایمٹی قوت ہونے کی وجہ سے ، بصورت دیگر دشمن ممالک کب سے اس ملک کی اینٹ سے اینٹ بجا کر ڈکلیئر کرچکے ہوتے ۔
آپ دیکھ لیجئے پاکستان دشمنوں کے حصار میں ھے ، اندرونی و بیرونی محاذوں پر تواتر کے ساتھ سازشیں پنپ رہی ہیں ۔ پاکستان کو کمزور کرنے کا کوئی موقع گنوایا نہیں جارہا ، لیکن اس کے باوجود خوش آئند امر یہ ہے کہ روز افزوں ہماری دفاعی صلاحیت میں بہتری آرہی ہے ۔ اس میں کوئی شک نہیں قوم غربت، بےروزگاری ، افلاس، بھوک ، ننگ ، مہنگائی اور بنیادی سہولیات تک سے محروم ہے ، لیکن دفاعی شعبے میں ترقی ہی اس ملک اور قوم کی زندگی ہے ۔
آپ جانتے ہیں بھارت دفاعی استحکام کے لیے پوری تندہی سے آگے بڑھ رہا ہے آئے دن نئی ایٹم بموں کے دھماکے کر کے پاکستان کو دھمکانے کی کوشش کر رہا ہے لیکن ہمیں فخر ہونا چاہیے کہ ہمارے دفاعی ادارے ہمہ تن مصروف ہیں اور یہ بھارتی اداروں کو منہ توڑ جواب دے رہے ہیں ۔
اب ہم جائی گے سال 2013 کی طرف بھارت نے جنوری 2013ء میں کروز میزائل براہموس کا تجربہ کر کے دفاعی شعبے میں پاکستان پر سبقت لے جانے کی اپنی تئیں کوشس کی ، لیکن پاکستان نے اس سے پہلے ایٹمی ہتھیار ساتھ لے جانے کی صلاحیت رکھنے والے کروز میزائل “بابر ” جیسے حتف سیون کا نام بھی دیا گیا ہے کا تجربہ کیا تھا ۔ بعدازاں بھارت نے براہموس ٹو ، براہموس اے اور براہموس ایم کے تجربات کیے ، لیکن پاکستان نے 2 جنوری کو جدید ٹیکنالوجی سے لیس کروز میزائل “رعد” کا کامیاب تجربہ کر کے بھارت کو زناٹے دار تھپڑ رسید کیا ۔ یہ دفاعی میدان میں پاکستان کی بیش قیمت کامیابی ہے ۔ یہ وہ میزائل ہے جو اسٹیلتھ ٹیکنالوجی سے مزین ہے ، اسٹیلتھ ٹیکنالوجی سے مراد یہ ہے کہ اسے دشمن کا کوئی ریڈار نہیں دیکھ سکتا ۔ یہ میزائل روایتی اور جوہری ہتھیار بھی لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے ۔
ہمیں دفاعی میدان میں اسی طرح آگے بڑھتے رہنا چاہئیے ، کیونکہ ہمارا ازلی دشمن ہمیں نیچے دکھانے ، خطے میں چودھراہٹ قائم کرنے کے لئے پاوں مار رہا ہے ۔
میرا آخری پیغام تمام پاکستانیوں کے لئے ہے کہ ہمارا دشمن صرف ایک نہیں ہے ۔ پاکستان کے دشمن بہت سے ہیں ۔ ہر پاکستانی کو اپنے وطن کی حفاظت خود ہی کرنی ہوگی اور اہنے اندر کے دشمن اور باہر کے دشمن کو مومن کی فراست سے پہنچاننا ، ڈھونڈنا اور بچنے کی تراکیب کی انتھک کوشش کرنی ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

Adblock Detected

Welcome! It looks like you're using an ad blocker. That's okay. Who doesn't? But without advertising-income, we can't keep making this site awesome.